ہلکی آنچ پر کھانا پکاتے ہوئے خاتون کی ایک غلطی نے اس کا پیٹ خراب کردیا.

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) برطانیہ میں ایک خاتون نے ہلکی آنچ پر کھانا پکاتے ہوئے ایک ایسی غلطی کر دی کہ اپنے ساتھ ساتھ اپنے شوہر کو بھی زہرخورانی کرا بیٹھی۔ دی مرر کے مطابق عینی سلیوان نامی اس خاتون کو بینز (Beans)پکانے کی ایک نئی ترکیب ملی جس کے تحت اسے کئی گھنٹے لیے بینز کو ہلکی آنچ پر پکانا تھا۔ ترکیب کے مطابق عینی نے بینز کو پہلے دو گھنٹے کے لیے بھگو کر بھی رکھا اور پھر 7گھنٹے تک ہلکی آنچ پر پکاتی رہی لیکن جب اس نے کھولے تو بینز ابھی سخت تھے اور ان کا سائز بھی نہیں بڑھا تھا لیکن عینی نے انہیں پکا ہوا سمجھ کر خود بھی کھا لیا اور اپنے شوہر کو بھی کھلا دیئے۔
یہ بینز کھانے کی دیر تھی کہ دونوں کی حالت بگڑ گئی۔ انہیں قے آنے لگی اور ان کا پیٹ خراب ہو گیا۔ جب وہ ڈاکٹر کے پاس گئے تو اس نے بتایا کہ انہیں ڈائریا ہو گیا ہے۔ جب ڈاکٹر نے ان سے کھانے کے بارے میں پوچھا اور عینی نے تفصیل بتائی تو ڈاکٹر نے ڈائریا کی وجہ بھانپ لی۔ اس نے بتایا کہ ”بینز ابھی کچے تھے اور کھانے کے قابل نہیں ہوئے تھے۔تاہم کچھ نرم ہو گئے تھے۔ ایسی حالت میں ان میں پایا جانے والا زہریلا مادہ فائٹوہائیمیگلوٹینین (Phytohaemagglutinin)کچے بینز کی نسبت زیادہ خطرناک ہو جاتا ہے۔ رپورٹ کے مطابق عینی نے غلطی یہ کی کہ اس نے بینز کو 10منٹ تک ابالا نہیں تھا۔ اگر وہ انہیں ابال لیتی تو اس میں موجود زہریلا مادہ ختم ہو جاتا۔ماہرین کا کہنا تھاتھا کہ ”اس خاتون کو بینز پانچ گھنٹے تک بھگو کر خشک کرنے چاہئیں تھے اور پھر انہیں دھو کر 10منٹ تک ابالنے کے بعد ہلکی آنچ پر پکانے کے لیے رکھنا چاہیے تھا۔ انہیں نہ ابال کر اس نے ان کا زہر کا لیول بڑھا لیا اور بیمار ہو گئی۔“

It's only fair to share...Email this to someoneBuffer this pageDigg thisShare on FacebookShare on Google+Tweet about this on TwitterShare on LinkedInShare on RedditPin on Pinterest

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں